461

ببرلو میں بدامنی کا راج،ڈی آئی جی سکھر نے نوٹس لے لیا،ٹاسک نئے ایس ایچ او کے سپرد

رپورٹ:احسان بلوچ۔۔۔

خیرپور کے علاقے تھانہ ببرلو کے قریب پل شاخ ابڑی کے مقام چار مسلحہ ملزمان نے آغاقادرداد مارکیٹ سے گاوں مولابخش مستوئی جاتے ہوئے دو نوجوانوں میر حسن اور فیاض احمد کو اغوا کرنے کے بعد شدید تشدد کے بعد موبائل فون اور موٹرسائیکل چھین کر فرار ہوگئے،واقعے کے بعد متاثرین نے ون فائیو ،تھانہ ببرلو اور ایس ایس پی خیرپور آفس کو فوری طور پر آگاہی دی گئی جس پر ایس ایچ او بدر الدین بھٹو عملے سمیت پہنچے جائے وقوعہ کا جائزہ لیا اور ملزمان کے پیروں کے نشانات چیک کیئے،واقعے کے بعد حاجی عبدالحمید مستوئی،محمد احسان اور محمد افضل مستوئی کی قیادت میں وفد نے ڈی آئی جی سکھر فداحسین مستوئی سے ملاقات کرکے امن امان کی مجموعی اور تازہ ترین صورتحال سے آگاہ کیا اور ڈی آئی جی کو بتایا کہ کنگانی گوٹھ کو ابڑی،ببرلو اور سٹھیو سے سکھر جانے کے لیے راستے ہیں اور کاروبار سے وابستہ افراد کو رات کے اوقات میں بڑی مشکلات کا سامنہ ہے گزشتہ چند برسوں میں صرف ہماری برادری کے افراد کو نشانہ بنایا گیا ہے رات کو پیش آنے والے واقعے کے نشانات بھی پولیس کی موجودگی میں دڑھے والا بھیو گوٹھ کے قریب پائے گئے ہیں اس لیے علاقے میں پولیس پکیٹ کے قیام کی درخواست کی جس پر ڈی آئی جی نے پولیس کے متعلقہ افسران کو ہدایات جاری کیں،ڈی آئی جی فداحسین مستوئی کا کہنا تھا کہ امن و امان کے قیام اور عوام کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے تمام تر اقدامات کیے جائیں گے،جریائم پیشا افراد کے خلاف قانون حرکت میں ہے کسی سے رعایت نہیں ہوگی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں