44

طالبان نے افغانستان پر کنٹرول سنبھال لیا،عام معافی کا اعلان، عبوری حکومت بنانے پر اتفاق

مانیٹرنگ ڈیسک ،

اتوار کے روز طالبان نے کنڑ، پکتیا، پکتیکا اور قابل سمیت دیگر علاقوں پر کنٹرول سنبھال لیا، طالبان نے پل چرخی جیل پر قبضہ کر کے معمولی نوعیت کے کیسوں میں قید قیدیوں کو آزاد کر دیا جبکہ کہ کابل کے اندر موجود افغانستان کے صدر اشرف غنی سمیت دیگر افراد کو نکالنے کے لیے امریکہ کی جانب سے کابل ایئر پورٹ پر اتارے گئے ہیں طالبان کی پیش قدمی کے بعد افغانستان میں مسلسل حالات تبدیل ہوتے جا رہے ہیں طالبان ترجمان کے مطابق طالبان نے اعلان کیا ہے کہ وہ کسی سے انتقام نہیں لیں گے اور نہ ہی کسی کے خلاف بلاوجہ کاروائی نہیں کریں گے طالبان کی اعلیٰ قیادت نے طالبان کو ہدایت کی ہے کہ وہ بلاوجہ لوگوں کے خلاف کارروائی نہ کرے یاد رہے کہ انیس سو ننانوے کے بعد امریکہ نے اتحادیوں کے ساتھ مل کر افغانستان میں طالبان کی حکومت کا خاتمہ کرکے اپنی مرضی کی حکومت قائم کی مختلف مختلف ادوار میں مختلف ہوکر حکمران رہے گزشتہ کچھ عرصے سے امریکہ نے افغانستان سے نکلنے کا فیصلہ کیا اور قطر میں مذاکرات کا سلسلہ شروع ہوا اسی دوران امریکہ نے اپنی فوجیں واپس بلانا شروع کیں، ادھر پی آئی اے کے دو جہاز کابل ایئرپورٹ پر کھڑے ہیں جن میں چار سو ننانوے مسافر سوار ہیں جنہیں تاحال اڑنے کی اجازت نہیں دی جا رہی ہے اس سلسلے میں پاکستانی سفارتخانہ کوششوں میں مصروف ہے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں